عدلیہ نے 3 ماہ میں 2 لاکھ مقدمات نمٹائے، چیف جسٹس 25

عدلیہ نے 3 ماہ میں 2 لاکھ مقدمات نمٹائے، چیف جسٹس

اسلام آباد: پاکستان کے چیف جسٹس جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ گزشتہ 3 ماہ کے دوران عدلیہ نے دو لاکھ مقدمات دکھایا ہے.

سپریم کورٹ بار کے چیف جسٹس کے اعزاز میں چیف جسٹس کے اعزاز میں خطاب کرتے ہوئے، جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ سماج میں کوئی برا نہیں ہے، عدالت کے محکمہ میں اچھا کام کیا جا رہا ہے، سپریم کورٹ میں زیر التواء مقدمات کی تعداد یہ 40500 سے 38300 تک کم ہوگئی ہے.

چیف جسٹس نے کہا کہ 3 مہینے تک ملک میں زیر التواء مقدمات کی تعداد 19 ملین سے 17 ملین تک ہو گئی ہے، اس میں دو لاکھ مقدمات کا بوجھ کم ہوگیا جبکہ 40 جنوری کو سپریم کورٹ میں زیر التواء مقدمات کی تعداد زیادہ ہے 38،000 بائیں

بھی پڑھیں: آج، چیف جسٹس، چیف جسٹس کی وجہ سے لوگ پریشان ہیں

جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ سپریم کورٹ نے 2019 میں درج کردہ سماعت کی درخواست کی ہے، اور صرف 581 مجرمانہ اپیل کیے گئے ہیں، لیکن فوجی معاملات کے لئے تمام منتقلی اپیل کی گئی ہے اور کراچی رجسٹری میں کوئی جرم نہیں

چیف جسٹس نے کہا کہ ماڈل ماڈل بہت تیز مقدمات حاصل کررہے ہیں، ماڈل جسٹس کے نئے ملازمین کو ملازم نہیں کیا گیا ہے اور نہ ہی اضافی عملے کو ملا ہے، لیکن صرف ججوں اور صرف ججوں کو محنت کر رہی ہے.

مزید پڑھیں:  معروف بالی ووڈ اداکارارباز خان کب اور کس کے ساتھ شادی کرنے والے ہیں ؟ شوبز کے میدان سے دھماکے دار خبر آگئی

چیف جسٹس نے مزید کہا کہ قانون و امان کی صورت حال بھی بدتر ہو رہی ہے، وہ ھزاره کمیونٹی کا مظاہرہ کرتے ہوئے دیکھتے ہیں، لیکن کوئی بھی نہیں سنتا ہے جب معیشت کے بارے میں خبریں بھی مایوس ہو جاتی ہے، یہ کبھی کبھی کہا جاتا ہے کہ معیشت آئی سی یو میں داخل ہو گیا ہے اور یہ کہا جاتا ہے کہ معیشت آئی سی یو سے باہر آئی ہے.

پوسٹ چیف جسٹس، عدلیہ نے 3 ماہ میں دو لاکھ مقدمات درج کیے ہیں پہلے پیش آیا ایکسپریس اردو.

#BBCNewsWorld – #SocialNewsBank

Free Download WordPress Themes
Premium WordPress Themes Download
Download Premium WordPress Themes Free
Free Download WordPress Themes
free online course
download intex firmware
Download Best WordPress Themes Free Download
udemy free download

اپنا تبصرہ بھیجیں