شدید بارشوں سے کیچ حفاظتی بند میں مسلسل پانی کا رساؤ، کسی بھی وقت ہنگامی صورتحال پیدا ہو سکتی ہے،ہائی الرٹ جاری کر دیا گیا، لوگوں میں شدید خوف و ہراس 12

شدید بارشوں سے کیچ حفاظتی بند میں مسلسل پانی کا رساؤ، کسی بھی وقت ہنگامی صورتحال پیدا ہو سکتی ہے،ہائی الرٹ جاری کر دیا گیا، لوگوں میں شدید خوف و ہراس

تربت(آن لائن)پچھے دس سالوں کے بعد تربت میں تیزبارش،شدیدبارش سے کیچ کور میں سیلابی کیفیت ،کیچ حفاظتی بند میں مسلسل پانی کے رساؤ سے لوگوں میں خوف کا سماں، آبسردو کرم ندی میں پل کا ایک حصہ جبکہ سوراپ ندی میں حفاظتی بند کا سرا ٹوٹ گیا،علاقہ مکینوں میں خوف ،تجابان میں ڈنڈاراور بالگتر میں شدیدبارش۔ گزشتہ شب تربت سمیت ضلع کیچ میں ہونے والی بارشوں کے سبب کئی سالوں سے جاری خشک سالی کا خاتمہ ہوگیااور زمین میں زندگی کی لہر دوڑ گئی تو

دوسری طرف ندی نالوں اور دریاؤں میں پانی آنے سے سیلابی کیفیت پیدا ہوگئی ہے جس سے لوگوں میں خوف کا ماحول ہے۔کیچ کور ندی کے حفاظتی بند میں کوشقلات کے مقام پر مختلف جگہوں پر پانی کا رساؤ ہونے کے سبب ارد گرد کی آبادی سخت خوف شکار ہوگئی ہے،حالیہ بارشوں سے میرانی ڈیم میں کافی پانی جمع،میرانی ڈیم بھرنے سے ضلع گوادرکے عوام خوش ،گوادرکے عوام کومیرانی ڈیم سے اب صاف پانی ملے گا۔اطلاعات کے مطابق کیچ کور میں شام گئے تک پانی کے ریلوں کی آمد جاری رہی جس سے پانی کا دباؤ بھی بڑھتا جارہا ہے، علاقہ مکینوں میں رات کے وقت کسی بھی ہنگامی صورتحال پیداہونے کے ممکنہ خدشات پر سخت خو ف کاماحول ہے تاہم انتظامیہ کے مطابق پانی کے رساؤ سے کسی بڑے خطرے کی بات نہیں البتہ ہنگامی صورت حال کے پیش نظر انتظامیہ مکمل الرٹ ہے۔ادھر پانی کے زبردست ریلے سے آبسر کو تربت شہر سے ملانے والی دو کرم پل کاایک حصہ یعنی گائیدبند بہہ جانے کی وجہ سے آبسر کا زمینی رابطہ تربت شہر سے کٹ گیا، ضلعی انتظامیہ اور فورسز نے فوری طور پر مشینری کے ساتھ وہاں پہنچ کر امدادی کام شروع کردیئے اور پانی کو شہری آبادی کی طرف بڑھنے سے روک کر پانی کا سرا دوبارہ ندی کی جانب موڑ دیاجبکہ فوری طور پر قریبی آبادی کو محفوظ مقام پر منتقل کردیاگیا ، پل ٹوٹنے سے دونوں جانب لوگوں کی بڑی تعداد پھنس کر رہ گئی،آبسرسمیت شہرکے قریبی علاقوں کے بیشتردکاندارسمیت عوام شہر نہ پہنچ سکے ،جس سے بازارجزوی بند رہا سڑکیں سننان رہیں،کیچ ندی،سوراپ ندی،دو کورم ندی،نہنگ ندی میں سیلابی ریلے۔

کیچ ندی سے منسلک تربت شہرکی حفاظتی بند کوشقلات کے مقام پرحفاظتی بندمیں کئی دراڑیں ،سوراخوں سے پانی شہرکی طرف بہتارہا۔اسی طرح بارشوں کے سبب گوکدان میں سوراپ ندی کی حفاظتی بند کو بھی کافی نقصان پہنچاہے۔ سوراپ ندی پر قائم پل کے سرے کو آبادی کی جانب سے پانی کے ریلے نے سخت نقصان پہنچادیا ، ریلے سے بند کا ایک بڑا حصہ پانی میں بہہ گیا جس سے علاقہ مکینوں میں سراسیمگی پھیل گئی ،انتظامیہ نے اس پر فوری ایکشن لیتے ہوئے ہنگامی بنیادوں پر

وہاں پہنچ کر پانی کا رخ آبادی کی طرف بڑھنے سے روک کر علاقہ کو ممکنہ تباہی سے بچالیا۔دوسری جانب تجابان میں مختلف علاقوں سے آنے والے پانی کے ریلوں سے سی پیک روٹ کو سخت نقصان پہنچنے کی اطلاع ہے۔ ذرائع کے مطابق ضلع کیچ کے علاقے تجابان کے مقام پر تعمیر شدہ ایم ایٹ سڑک کا ایک بڑا حصہ پانی میں بہہ جانے سے ہرطرح کی ٹریفک معطل رہ گئی جس سے پنجگور اور کوئٹہ کا رابطہ تربت سے منقطع رہا،مزکورہ سڑک سی پیک روٹ کا حصہ بھی ہے ۔

جبکہ تربت اور گوادر کے درمیان نلینٹ کے قریب ایم ایٹ شاہراہ پر پہلے سے پل ٹوٹنے کے باعث متبادل راستے میں پانی کا ایک بڑا ریلہ آگیا جس کی وجہ سے ٹریفک معطل رہی جس سے کراچی اورگوادر کا زمینی رابطہ تربت سے منقطع ہے،بمشکل مسافربسیں گزررہی ہیں۔ میرانی ڈیم میں کیچ کور دریا سے پانی کے بڑے ریلے کے سبب پانی کافی حد تک جمع ہوگیا ہے،محکمہ ایری گیشن کیچ کے ایکسیئن سمیع اللہ بلوچ کے مطابق میرانی ڈیم کا لیول232تک پہنچ چکاہے امکان ہے

مزید پڑھیں:  پرائیویٹ ٹور آپریٹرز کی سرکاری کے مقابلے کم خرچ حج سکیم لانے کی تیاری، حج پیکج کتنا ہو گا ؟

کل تک میرانی ڈیم پانی سے بھرجائیگا مزیدبتایاکہ کیچ کور میں تقریبا 8فٹ تک پانی جمع ہے تاہم اس سے خطرے کی کوئی بات نہیں ہے۔تاہم تربت کے علاوہ بلیدہ ،ہوشاپ،تجابان، پیدارک،ڈنڈار ،تمپ،مند، بل نگوراور دشت میں رات بھر بارش برسنے اور مقامی ندی نالوں میں پانی آنے سے طغیانی کی اطلاعات ملی ہیں،یونین کونسل ڈنڈارمیں زراعت کو کافی نقصان پہنچاہے اورڈنڈارکے گٹے دپ،بیدرنگ،ڈلے بازارکے حفاظتی بندٹوٹ گئے ہیں ،تاہم آبادی محفوظ رہا،ڈڈھے دشت کورمیں پانی ریلہ،

ڈڈھے سمیت دشت کے متعدد علاقوں کے ذرعی بندات متاثررہے تاہم کہیں سے کسی طرح کی جانی و مالی نقصان کی اطلاع نہیں ملی۔ یاد رہے کہ تربت سمیت ضلع کیچ میں گزشتہ کئی سالوں سے بارش نا ہونے کے باعث شدید خشک سالی جنم لے چکا تھا جس سے علاقے میں قحط سالی کا خدشہ پیدا ہوگیا ، دشت اور بلیدہ کے کئی دیہی علاقوں سے خشک سالی کے باعث لوگوں نے ہجرت بھی کی تھی مگر گزشتہ ہفتے کی بارشوں اور بدھ کو ایک بار پھر ہونے والی طوفانی بارشوں نے

خشک سالی کا خاتمہ کردیا ہے اس سے لوگوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی ہے۔ ضلع کیچ بلخصوص تربت میں گزشتہ 10 سالوں سے اس طرح کی بڑی بارشوں سے محروم چلا آرہا تھا اور لوگوں کو بد ترین مسائل درپیش تھے اور کئی دفعہ اللہ سے باران رحمت کی اجتماعی دعا بھی کی گئی تھی ، مقامی شہریوں کاکہناہے کہ موجودہ بارشیں اللہ کی رحمت ہیں اور لوگوں کی دعاؤں کا نتیجہ ہے ، ضلع کیچ ذرخیز خطہ دشت میں بھی بارشوں کے نتیجے میں ذرعی بارانی بند بھی چھلک پڑے ہیں اور

اہلیان دشت نے موجودہ بارشوں کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے اسے علاقے میں زراعت پر مثبت اثرات کی نوید قرار دیا ہے ۔حکومت بلوچستان نے صوبے میں جاری بارشوں کے بعد ہائی الرٹ جاری کر دیا اور پی ڈی ایم اے کی جانب سے کنٹرول روم قائم قائم کر دیا گیا تفصیلات کے مطابق بلوچستان میں بارشوں کے بعد پی ڈی ایم اے ہائی الرٹ اورپی ڈی ایم اے کی جانب سے کنٹرول روم قائم کر دیا گیا کنٹرول روم میں صوبے بھر سے بارشوں کے نقصانات سے متعلق جائزہ لیا جارہا ہے صوبائی وزیرضیالانگو اور ڈی جی پی ڈی ایم خود کنٹرول روم کی نگرانی کررہے ہیں کسی بھی ناگہانی صورتحال سے نمٹنے کے لئے پی ڈی ایم اے تیار ہے بارشوں سے ہونے والے نقصانات کابھی جائزہ لیا جارہا ہے۔

The submit شدید بارشوں سے کیچ حفاظتی بند میں مسلسل پانی کا رساؤ، کسی بھی وقت ہنگامی صورتحال پیدا ہو سکتی ہے،ہائی الرٹ جاری کر دیا گیا، لوگوں میں شدید خوف و ہراس appeared first on Zeropoint.

Get More News

Download WordPress Themes Free
Free Download WordPress Themes
Download WordPress Themes
Download Best WordPress Themes Free Download
free online course
download samsung firmware
Download WordPress Themes
online free course

اپنا تبصرہ بھیجیں