معدے کے بیکٹیریا دواؤں کے منفی اثرات بڑھاسکتے ہیں 14

معدے کے بیکٹیریا دواؤں کے منفی اثرات بڑھاسکتے ہیں

نیویارک: ہم جانتے ہیں کہ ایک ہی دو اگرچہ کافی لوگوں کو فائدہ دیتی ہے لیکن بعض افراد میں شدید ضمنی اثرات کی وجہ بنتی ہے۔ ماہرین کے مطابق اس کی وجہ ان افراد کے معدے میں موجود بیکٹیریا ہوسکتے ہیں۔

’سائنس‘ نامی جریدے میں شائع ہونے والی ایک رپورٹ میں ییل یونیورسٹی کے ماہرین نے لکھا ہے کہ تین دوائیں ایسی ہی جو معدے میں موجود خاص بیکٹیریا کی صورت میں انتہائی مضر اثرات مرتب کرتی ہیں۔ یونیورسٹی کے پروفیسر اینڈریو گُڈمین کہتے ہیں ، ’ اگر ہمیں پتا چل جائے کی معدے میں موجود ہزاروں لاکھوں اقسام کے بیکٹیریا دواؤں کی صورت میں کس طرح کا برتاؤ کرتے ہیں تو ہم کئ مریضوں کو پریشانی اور مزید خطرناک سائیڈ افیکٹس سے بچاسکتے ہیں۔‘

اس کے لیے ماہرین نے کئی ایک اینٹی وائرل ادویہ کو چوہوں پر آزمایا تو معلوم ہوا کہ معدے میں موجود بعض بیکٹیریا کی موجودگی میں دوائیں زہریلے اثرات پیدا کرتی ہیں۔ اگلے مرحلے میں چوہوں میں ان بیکٹیریا کو تھوڑا تبدیل کیا گیا اور پھر اس دوا کے ضمنی اثرات نوٹ کئے گئے۔

اس بنا پر ماہرین نے معدے کے بیکٹیریا اور دواؤں کے ضمنی اثرات کی پیشگوئی کرنے والا ایک ریاضیاتی ماڈل تیار کیا جس نے تین دواؤں کے ضمنی اثرات کی درست پیشگوئی کی ان میں ایک دوا کلونازیپام بھی شامل ہے۔ ماہرین کا اندازہ ہے کہ کسی دوا کے خطرناک ری ایکشن میں معدے کے جرثوموں کا کردار 20 تا 80 فیصد تک ہوسکتا ہے۔

مزید پڑھیں:  دوسروں کی مدد دماغ پر اچھے اثرات مرتب کرتی ہے

اس اہم تحقیق سے اول تو یہ بات سامنے آئی ہے کہ بعض دوائیں کیوں الٹا اثر کرتی ہیں اور اس کے بعد دواؤں کو مؤثر اور بے ضرر بنانے میں بھی مدد مل سکے گی۔

The put up معدے کے بیکٹیریا دواؤں کے منفی اثرات بڑھاسکتے ہیں appeared first on ایکسپریس اردو.

Download Premium WordPress Themes Free
Download WordPress Themes Free
Free Download WordPress Themes
Premium WordPress Themes Download
udemy course download free
download micromax firmware
Download Premium WordPress Themes Free
lynda course free download
کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں